Suno .! December Loot Aaya Hay.!

دسمبر لوٹ آیا ھے

تمھارے لوٹ آنے کی

نئی امید جاگی ھے

ابھی پچھلے برس تم نے

میرے سینے پر سر رکھ کر

حیا سے منہ چھپایا تھا

ابھی پچھلے برس ہی تو

دسمبر کے مہینے میں

تمھیں بانہوں میں تھاما تھا

مگر اپریل آنے تک

تمھاری جھیل آنکھوں میں

نیا سپنا سمایا تھا

میرے چھوٹے سے آنگن میں

تمھیں وحشت سی ہوتی تھی

مجھے تم نے بتایا تھا

کسی کی قید میں رہنا

مجھے اچھا نہیں لگتا

میں اک آزاد پنچھی ہوں

سنا ھے پھر سے تنہا ہو

ستمبر کے مہینے میں

بہت خاموش رہتی ہو

کہ جس کو تم نے چاہا تھا

وفا کے نام سے اس کو

بہت وحشت سی ہوتی ھے

وہ اک آزاد پنچھی تھا

کسی کی قید میں رہنا

اسے اچھا نہیں لگتا

سنا ھے میرے آنگن کی

تمھیں اب یاد آتی ھے

سنا ھے تم پشیماں ہو

چلو پھر ایسا کرتے ھیں

دسمبر کا مہینہ ھے

نیا آغاز کرتے ھیں

تمھیں بانہوں میں لے لوں میں

میرے سینے پر سر رکھ کر

حیا سے منہ چھپا لو تم

دسمبر لوٹ آیا ھے

سنو اب لوٹ آؤ تم :broken_heart: