مہوش حیات نے تمام چڑیا گھر بند کرنے کا مطالبہ کردیا

مہوش حیات نے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کرتے ہوئے مزید لکھا کہ تمام جانور آزاد پیدا ہوتے ہیں، اب حکام کوان چڑیا گھروں کو بند کردینا چاہیے ۔

واضح رہے کہ ہاتھی کاون 1985 میں پاکستان کو سری لنکن صدرکی جانب سے تحفے میں ملا تھا، 35 سال یہاں گزارنے کے بعد اب کاون کمبوڈیا میں زندگی کے باقی ایام گزارے گا، بچوں کا دل بہلانے والے کاون نے اسلام آباد کے چڑیا گھر میں بہت مشکلات برداشت کیں۔

کاون کے ساتھ زیادتی دیکھ کر امریکی پاپ گلوکارہ اور رضاکاروں نے اس کی بہتر ماحول میں منتقلی کی مہم چلائی تھی، سینیٹ نے بھی کاون کے ساتھ ناروا سلوک کا نوٹس لیا جب کہ اسلام آباد ہائی کورٹ نے کاون کی محفوظ مقام پر منتقلی کے احکامات جاری کیے۔

2 Likes

dear mewhish aap b khain bund ho jaain

1 Like

mehwish to phr mehwish h

Wese ye bilkl thek ha janwaro ko mahz entertainment or paisy kame ka zariya hi q banaya ha … In ko azaad kary🧤